پاکستان اسٹیٹ آئل ( پی ایس او) کا قیام1974میں اس وقت عمل میں آیا جب یکم جنوری کو حکومت نے پاکستان نیشنل آئل(پی این او) اور داؤد پیٹرولیم لمیٹڈ(ڈی پی ایل) کو ضم کر کے پریمیئمر آئل کمپنی(پی ایس او سی ایل) بنا کر اس کا انتظام سنبھالا۔اس کے فوراََ بعد ہی 3جون1974کو پیٹرولیم اسٹوریج ڈیویلپمنٹ کارپوریشن(پی ایس ڈی سی) وجود میں آئی ۔23اگست 1976کو پی ایس ڈی سی کا نام تبدیل کر کے اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ(SOCL)رکھ دیا گیا۔اس کے بعد 15ستمبر1976کو ESSO کی انڈر ٹیکنگز خرید کر اس کا انتظام ایس او سی ایل کو دے دیا گیا۔اس سال کے اختتام ( 30دسمبر1976) پر پریمیئر آئل کمپنی لمیٹڈ اور اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ کے انضمام کے نتیجے میں پاکستان اسٹیٹ آئل (PSO) کا قیام عمل میں آیا۔ 

پی ایس او کے قیام کے بعد کار پوریٹ کلچر کے نتیجے میں ایک جامع تجدیدی پروگرام متعارف کروایا گیا جو کہ 2004میں مکمل طور پرنافذ کیا گیا۔وقت گزرنے کے ساتھ اس پروگرام میں ادارے کی تعمیرِ نو ، عملے کی تربیت،ملازمین کو با اختیار بنانے اور فعال ٹیمو ں کے ذریعے فیصلہ سازی میں شفافیت کو شامل کیا گیا۔اس ادارے کے تجدیدی پروگرام کے تحت کمپنی کے اہم آپریشنز کو الگ الگ سر گر میوں میں تقسیم کیا گیا ہے جن کو قانونی،مالی، معلوماتی اور دیگر سروسز کی سپورٹ حاصل ہے۔ اس ساختی تبدیلی کے نفاذ اور نگرانی کرنے کے لئے متعلقہ چیک اینڈ بیلنس سسٹمزقائم کئے گئے ہیں۔اس کارپوریٹ اصلاح کے تحت ہیومن ریسورس ڈیویلپمنٹ کمپنی کے ایجنڈے میں اہم حیثیت اختیار کر گئی ہے۔

یہ کارپوریٹ اصلاح کے موثر نفاذ ، بہترین صنعتی طریقوں اور کاروبار بڑھانے کی حکمتِ عملیوں کا نتیجہ ہی ہے کہ پی ایس او انتہائی مسابقتی ماحول میں بھی اپنی مستحکم حیثیت بر قرار رکھے ہو ئے ہے۔


PSO Step By Step:

یکم جنوری 1974

وفاقی حکومت نے پیٹرولیم پرودکٹس کی مارکیٹنگ(فیڈرل کنٹرول ایکٹ1974) کے تحت پی این او (پاکستان نیشنل آئل) اور ڈی پی ایل (داؤد پیٹرولیم لمیٹڈ) کا انتظام سنبھال لیا اور اس کا نام تبدیل کر کے POCL( پریمیئر آئل کمپنی لمیٹڈ )کر دیا گیا۔

6 جون 1974

حکومت نے " پیٹرولیم اسٹوریج ڈیویلپمنٹ کارپوریشن پی ایس ڈی سی کو شامل کر لیا۔

23 اگست 1976

پی ایس ڈی سی کا نام تبدیل کر کے اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ(ایس او سی ایل) کر دیا گیا۔

15 ستمبر 1976

حکومت نے ایس او کی انڈر ٹیکنگزخرید لیں اور ایس او سی ایل کا انتظام سنبھال لیا۔

30 دسمبر 1976

حکومت نے پی این او اورپی او سی ایل کو ایس او سی ایل (اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ) میں ضم کر دیا اور اس کا نام تبدیل کر کے پاکستان اسٹیٹ آئل کمپنی لمیٹڈ(پی ایس او) رکھ دیا گیا۔

1999

PSOکے نئے لوگو کے ساتھ نیو وژن پروگرام متعارف کروایا گیا۔