پاکستان اسٹیٹ آئل کمپنی ملک میں پٹرولیم آئل لبریکنٹس صارفین کے ایک بڑے طبقے کی ضروریات پوری کرتی ہے جن میں ریٹیل کسٹمرز، متعدد صنعتی یونٹس، حکومت، پاور پراجیکٹس ، شعبہ ہوا بازی اور میرین سیکٹر شامل ہیں۔ ہم حقیقت میں ملک کی معیشت کا پہیہ رواں دواں رکھتے ہیں۔ 
 

ہمارے 3546ریٹیل آؤٹ لیٹس نگر پارکر سے سوست تک اہل وطن تک رسائی کو ممکن بناتے ہیں ۔ ہمیں فخر ہے کہ ہم روزانہ تقریباً 28لاکھ صارفین کی فیول اور نان فیول ضرورت پوری کرتے ہیں۔
 

پی ایس او کی سرکاری صنعتی شعبے میں بالادستی کا اندازہ اس امر سے لگایا جاسکتا ہے کہ بڑے سرکاری ادارے مثلاً آئل اینڈ گیس ڈیولپمنٹ کمپنی، پاکستان آرمی، پاکستان ریلویز، نیوی، این ایل سی، پی اے ایف واہ اور ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا اپنی پٹرولیم ، آئل اور لبریکنٹس کی ضرورت پوری کرنے کے لیے پی ایس او پر اعتماد کرتے ہیں۔ 
 

واپڈا اور کے الیکٹرک جیسی قومی پاور کمپنیوں کو فیول کی سپلائی کے ساتھ پی ایس او ملک میں کام کرنے والے آزاد پاور پراجیکٹس (آئی پی پیز) کو فرنس آئل کی فراہمی کا واحد ذریعہ اور ملک کی فرنس آئل کی مارکیٹ میں 80 فیصدکاحصہ دار ہے۔ اس کے علاوہ پی ایس او ملک میں بڑھتی ہوئی توانائی کی طلب پوری کرنے میں بھی اپنا کردار فعال طریقے سے ادا کررہیہے۔


پی ایس او صنعتی یونٹس مثلاً ٹیکسٹائل، سیمنٹ، ایگری کلچر، ٹرانسپورٹ و دیگر کو بھی فیول فراہم کرتی ہے۔ ہمارے صنعتی صارفین کی اساس میں ایوان صدر اور وزیر اعظم سیکریٹریٹ جیسے معتبر ادارے شامل ہیں جہاں پی ایس او نے گاڑیوں کے بیڑوں کو رواں دواں رکھنے کے لیے کنزیومر آؤٹ لیٹ تعمیر کیے ہیں۔ 
 

اس کے ساتھ پی ایس او ملکی و غیرملکی فضائی کمپنیوں کی بھی ایندھن کی طلب پوری کرنے کے لیے خدمات فراہم کرتی ہے ۔ ہم ملک کے 9ایئرپورٹس پر جہازوں میں جیٹ فیول بھرنے کی سہولت فراہم کررہے ہیں ان ایئرپورٹس میں کراچی، لاہور، اسلام آباد، پشاور، ملتان، فیصل آباد، تربت، پسنی اور سیالکوٹ شامل ہیں۔
 

ہم کراچی کی بندرگاہ، کورنگی فش ہاربر اور پورٹ قاسم پر بحری جہازوں کو بھی ایندھن فراہم کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہم فیول سے متعلق پاک بحریہ، میری ٹائم سیکیوریٹی ایجنسی، کراچی پورٹ ٹرسٹ، پاکستان نیشنل شپنگ کارپوریشن، فیصل میرین آئل سروسز پرائیوٹ لمیٹڈ کی ضروریات بھی پوری کرتے ہیں